میراضلع(بھکر) ، مسائلستان

میراضلع(بھکر) ، مسائلستان

✍️ فانوس صفدر سید
پچھلے دنوں میں ڈیرہ اسماعیل خان سے اپنے آبائی گاؤں واپس آرہا تھا. ضلع بھکر کے نواحی علاقے داجل کے نزدیک ہی پہنچا تھا کہ وہاں اڈے پر ایک دلچسپ صورتحال ملاحظہ کی. رانا جہانزیب ٹرانسپورٹ کی گاڑی جب اڈے کے قریب پہنچی ، تقریباً اڈے سے ایک سو میٹر پہلے ڈرائیور نے تیز ہارن پر ہاتھ رکھ دیا. گاڑی کی آواز اور تیز ہارن نے وہ دہشت پیدا کی کہ اڈے پر موجود ہر شخص دہل گیا. میں نے بھی اپنی بائیک سائیڈ پر کی اور ساری صورت حال سے محظوظ ہونے لگا.میری طرح بائیکس والے سڑک کے دونوں اطراف اپنی بائیکس روکنے لگے. رکشے والے بھی ڈر کے مارے بریک لگانے پر مجبور ہوگئے. کچھ لوگ جو سڑک پار کرنے لگے تھے ہارن کی آواز سنتے ہی روڈ سے پانچ ہاتھ پیچھے ہٹ کر ایسے دیکھنے لگے جیسے بادب مرید اپنے مرشد کا دیدار کرنے لگے ہوں. لنک روڈ سے آنے والی ٹریفک پندرہ فٹ پیچھے بریک لگائے ایسے یکسوئی سے کھڑی ہوگئی تھی جیسے آگے بپھرا ہوا برساتی نالہ گزر رہا ہو.اُدھر گاڑی کی سپیڈ کم ہوئی اور نہ ہی ڈرائیور نے ہارن سے ہاتھ اٹھانے کی تکلیف گوارا کی ، اور اس شانِ بے نیازی سے گزرا جیسے سارا علاقہ اس کا محکوم ہو اور بادشاہ سلامت پورے شاہی پروٹوکول کے ساتھ گزر رہے ہوں. وہ ٹرانسپورٹ کمپنی جس نے کئی لوگوں کی جان لی ہو اور جس کے اوپر ضلع کی حدود میں داخل ہونے پر پابندی بھی رہی ہو ، اب بھی اس کمپنی کی گاڑیوں کا گنجان آباد علاقوں سے اتنی تیزی سے گزرنا جہاں انتظامیہ کی رٹ پر کئی سوال پیدا کرتا ہے ، وہیں ضلع بھکر کے باسیوں کے لئے بھی لمحہ فکریہ ہے کہ ہم ہر آواز خون دیکھنے کے بعد ہی کیوں اُٹھاتے ہیں. حفظِ ماتقدم کے طور پر کوئی جرم ہوتا دیکھ کر اس کو ایڈوانس ختم کرنے کی ہمارے اندر جرأت پیدا کیوں نہیں ہوتی. ہمارے اندر قیادت کا اتنا فقدان کیوں ہے جو ہم اپنے مشترکہ مسائل پر بھی متحد نہیں ہوپاتے. ساری صورتحال دیکھنے اور بہت دیر سوچنے کے بعد ایک جملہ میرے ذہن میں آیا جس میں سب سوالوں کے جواب پنہاں ہیں ،میں باقی راستے اس کو گنگناتا اور لطف اندوز ہوتا رہا ، اور آپ سے بھی یہی عرض کروں گا آپ بھی جب کبھی اپنے ضلع (بھکر) کی ابتر صورتحال پر رنجیدہ ہوں اور ذہن میں پریشانی کے اثرات نمودار ہونے لگیں تو اس جملے کو گنگنا کر لطف اندوز ہولیا کریں.
تقدیر کے مالک کا یہ فتوی ہے ازل سے
ہے جرمِ ضعیفی کی سزا، مرگِ مفاجات

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *