تعلیمی نظام انگلش میں ہونا چاہئے یا مادری زبان میں

شاباشی

تعلیمی نظام انگلش میں ہونا چاہئے یا مادری زبان میں ، یہ ایک تفصیل طلب ٹاپک ہے اور اس کے فوائد و نقصانات پر سیر حاصل بحثیں کی گئی ہیں. اس کے متعلق میرا موقف یہی رہا ہے کہ انگلش کو بطور سبجیکٹ پڑھنا،پڑھانا ضرور چاہئے لیکن کوئی سبجیکٹ انگلش میں نہیں پڑھانا چاہئے . خیر ہمارا آج کا موضوع یہ نہیں بلکہ آج آپ کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ انگلش کے الفاظ کے استعمال سے ہمارے دیہاتی ماحول میں کیا واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں جس کا مقصد محض آپ کو تفریح کا سامان مہیا کرنا ہے.
ہمارے ایک جاننے والے کا بیٹا انگلش میڈیم میں جانے لگا ، کچھ دن گزرے تو بیٹے نے ماں کو مژدہ سنایا کہ”امی آج مجھے گُڈ ملی ہے” ماں کچھ دیر سوچتی رہی کہ بھلا یہ گُڈ کیا بَلا ہوتی ہے ، پھر بیٹے کے بیگ کی خوب چھان بین کی لیکن گُڈ نامی چیز تلاش نہ کرسکیں. پھر ایک دن بیٹے نے کہا “امی آج پھر مجھے گُڈ ملی ہے ” تو ماں نے کہا ، بیٹا اگر گُڈ ملی تھی تو ساتھ لاتے کیوں نہیں”.
بیٹا اب ماں کو کس طرح بتائے کہ گڈ کس مٹھائی کا نام ہے…؟؟؟ رات کو “کاکے” کے ابا گھر آئے تو عقدہ کُھلا کہ “گُڈ” تو اپنی “شاباشی” کو کہتے ہیں.
ایک دوست بتا رہے تھے کہ میرا بیٹا ایک دن گھر آیا تو امی کو کہنے لگا ،امی مجھے money دو. ماں نے کہا بیٹا میرے پاس نہیں ہے وگرنہ تم پہ ضرور نچھاور کرتی لیکن بیٹا بضد تھا کہ نہیں میں نے لازمی money لینی ہے. بیٹے نے بہت زیادہ اصرار کیا تو ماں نے تنگ آکر پھینٹی لگا دی. رات کو پاپا گھر آئے تو بیٹے نے شکایت لگائی کہ امی کے پاس money تھی بھی لیکن مجھے نہیں دی بلکہ ساتھ ساتھ میری چھترول بھی کردی. شوہر غصے سے لال پیلے ہو کر بیوی کو کہنے لگے جب میں تجھے پیسے دے کر جاتا بھی ہوں پھر تو بیٹے کو کیوں نہیں دیتی… ؟؟؟تو وہ معصومیت سے کہنے لگیں یہ تو “money” مانگ رہا تھا.
ایسے ہی ایک دوست نوحہ کناں تھے کہ زمانے کے ساتھ ساتھ انگلش بھی بدل گئی ہے ہم تو زیڈ (Z) پڑھتے تھے اب تو زی ہوگیا ہے. اب ہم جیسے کیا کریں؟
الغرض انگلش کے فوائد اپنی جگہ مسلَّم لیکن اس بھوت نے ہمارے دیہاتی معاشرے کو تعلیم سے بہت متنفر کیا ہے.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *